ترکی کا دفاع میدان میں ایک بڑا قدم Bayraktar Akinci

یہ ایک ترکش ساختہ انتہائی بلندی پر ہر طرح کے موسم میں پرواز کرنے کی صلاحیت رکھنے والا ڈرون ہے جس کو جاسوسی اور دشمن پر حملہ کرنے جیسے مقاصد کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے

Bayraktar Akinci
تاحال پروڈکشن کے مراحل میں ہے اور اسکے مختلف قسم کے ٹیسٹ جاری ہیں اور اسکو اس سال کے آخر تک ترکش ملٹری کے حوالے کرنے کا پروگرام ہے
اگست 2019 میں یوکرینی ساختہ AL 450C نامی ٹربو پروپ انجنز سے اسکے گراؤنڈ رن مطلب زمین پر چلانے کے ٹیسٹس کا آغاز کیا گیا

پہلا انجن ٹیسٹ 1 ستمبر 2019 کو کیا گیا

اور اس ڈرون نے اپنی پہلی پرواز 6 دسمبر 2019 کو کی جس کا دورانیہ 16 منٹ کا تھا

یہ ڈرون اندرونی طور پر 400 کلوگرام وزنی لوڈ مطلب فیول لے کر جا سکتا ہے جبکہ اسکے بیرونی ہارڈ پوائنٹس پر 950 کلوگرام تک کے وزن کے مختلف بم میزائل اور جاسوسی کرنے کے آلات لگائے جا سکتے ہیں
کل ملا کر یہ ڈرون 1350 کلوگرام وزن اٹھا کر اڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے

عام معلومات:
اسکی لمبائی 39.4 فٹ جبکہ پروں کا کل گھیراؤ 65.6 فٹ اور ڈرون کی اونچائی 13.1 فٹ ہے

اسکو پاور دو یوکرینی ساختہ AL 450C نامی انجنز دیتے ہیں جنکی کل طاقت 750 ہارس پاور ہے
یہ ڈرون 24 گھنٹے تک مسلسل پرواز کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے جبکہ یہ زیادہ سے زیادہ 40000 فٹ تک کی بلندی تک پرواز کرنے کے قابل ہے
ہتھیار یا جاسوسی کے آلات لگانے کے لیے اسکے پروں کے نیچے 6 ہارڈ پوائنٹس ہیں

ہتھیار:

ہتھیاروں میں یہ زمین پر مار کرنے والے لیزر گائیڈڈ
MAM-L اور MAM-C
میزائلز
70 ملی میٹر قطر کے لیزر گائیڈڈ CIRIT میزائل
فضا سے فضا میں مار کرنے والے
Gokdogan اور Bozdogan
میزائلز

جبکہ فضا سے زمین پر مار کرنے والے ائیر لانچڈ سٹیلتھ کروز میزائل SOM بھی فائر کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے

بموں میں یہ
Mk 81 mk82 mk83
Joint direct attack munition (JDAM)
HGK range extension glide bomb
LGK range extension glide bomb

جبکہ اسکے avionics میں ترکش سٹیٹ آف دی آرٹ
Active electronically scanned array (AESA) radar

ترکش کمپنی Aselsan کا بنایا ہوا

Common aperture targeting system
جو اسکو زمینی اہداف کی نشاندہی اور انکو کامیابی سے تباہ کرنے کی صلاحیت فراہم کرتا ہے

اسکے علاوہ یہ دشمن ملک کی فضائی دفاعی نظام اور ریڈارز کو جام کرنے کے لیے الیکٹرانک وار فیئر POD بھی استعمال کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے جو اسکو دشمن ملک کے فضائی دفاعی نظاموں کے لیے ایک خطرناک ہتھیار بناتا ہے

نوٹ:
Bayraktar Akinci
پہلا ڈرون ہوگا جو لمبی دوری کے فضا سے لانچ کیے جانے والے کروز میزائل فائر کرنے کی صلاحیت رکھتا یے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں