لڈو گیم کی ایک عجیب کہانی

لوڈو گیم سے واقف ہیں نا آپ؟

یہ محض گیم نہیں ایک نشہ ہے اور نشہ کوئی بھی ہو برا ہوتا ہے۔

آپ کہیں گے جی یہ تو صرف ٹائم پاس کا کھیل ہے۔ لیکن میں بتاتی ہوں آپ کو کیسے یہ کھیل آہستہ آہستہ آپ کو اپنی لت لگاتاہے۔

کھیل کی شروعات ہوتی ہے چند ہزار کی Bet سے۔ آپ چند بازیاں جیتتے ہیں پھر آپ کو مزید سکے جمع کرنے کی خواہش ہونی لگتی ہے۔ آپ اس کے لئے بعض دفعہ چیٹنگ بھی کرتے ہیں۔ یہ پہلی برائی ہوتی ہے۔

چیٹنگ یعنی بے ایمانی۔ غلط طریقے سے پیسے جمع کرنا۔ اب آپ کہیں گے یار یہ تو بس کھیل میں۔۔۔آپ لوگ تو ہر جگہ نصیحت لے کے بیٹھ جاتے ہو۔ نہیں برائی ایسے ہی شروع ہوتی ہے ہلکے پھلکے انداز میں۔

پھر آپ کے دل میں آہستہ آہستہ لالچ گھر کرنے لگتا ہے۔ دوسری برائی۔ ایک بازی اور۔۔۔تھوڑے سکے اور۔ مزید اونچا لیول۔ یہاں سے شروع ہوتا ہے نشہ۔

آپ دوبازیاں جیت کے تیسری ہارتے ہیں۔ نقصان ہوتا ہے۔ اسے پورا کرنے کے لئے ایک بازی اور کھیلتے ہیں۔ وہ بھی ہار گئے۔ اب دوبازیاں کھیلیں۔ جیت گئے۔ نقصان پورا ہوا۔ لیکن دل نے کہا ایک اور کھیلو۔ ابھی نفع بھی کمانا ہے۔ ایک اور کھیلی۔ جیت گئے۔ پھر ایک اور۔۔۔ہار۔۔۔جیت۔۔۔جیت۔۔۔ہار۔ یوں سلسلہ شروع۔

اب نہ وقت کا ہوش ہے نہ دن رات کا۔ نمازیں قضا ہورہی ہیں۔ یا جلدی جلدی رکوع سجدے کئے کیونکہ ابھی سب آن ہیں لوڈو میں۔ گروپ گیم ہونا ہے۔ اہم کاموں میں دل نہیں لگ رہا۔ کھانے کا وقت نکل گیا۔ ماں باپ آوازیں دے رہے ہیں۔کھیل چل رہا ہے۔ پھر بھوک لگ گئی۔ ایک ہاتھ میں فون دوسرے میں پلیٹ۔ بغیر دیکھے جیسے تیسے لقمے نگل رہے ہیں۔ بازی لگ رہی ہے۔ کوائن جیت رہے ہیں۔ زندگی ہار رہے ہیں۔

اب بات کرتے ہیں ہار جیت کی۔

لوڈو میں آپ نے جیت کے ملینز کما لئے۔ اتنے کہ آپ نئے دوستوں سے ہار کے انہیں سکے بھی دلوادیتے ہیں۔ لیکن کیا آپ ان لاکھوں روپیوں سے ایک سیب بھی لاسکتے ہیں؟ چلیں سیب نہ سہی آدھی روٹی۔۔۔ایک ٹافی؟؟ آپ کا دوست اداس ہے تو لوڈو کے پیسوں سے اسے ہنسا سکتے ہیں؟؟؟

وہیں جب آپ ہارنے لگتے ہیں تو آپ خود پہ قابو کھونے لگتے ہیں۔ پہلے جھنجھلاہٹ پھر غصہ حاوی ہوتا ہے۔ ایک اور بازی ہارے تو غصہ اشتعال کی سرحدوں میں داخل ہوجاتا ہے۔ آپ پیچ و تاب کھاتے ہیں۔ تلملا کر پھر بازی لگاتے ہیں پھر ہارتے ہیں اور دانت پیس کر موبائل پٹخ دیتے ہیں۔

ایسے وقت میں کوئی آپ سے مخاطب ہوجائے تو آپ اسے کاٹ کھانے کو دوڑتے ہیں۔ کسی بات کو بنیاد بنا کر گھر والوں پہ غصہ اتارتے ہیں۔ نقصان صرف آپ کا ہورہا ہے۔ بیٹری ختم ہوتی ہے۔ فون کی بھی اور آپ کی بھی۔ ورچوئل ورلڈ میں ہارجانے والے سکوں کا غم آپ کو رئیل ورلڈ میں بھی بے چین رکھتا ہے۔ اور جب تک آپ دن رات ایک کرکے اپنے سکے دوبارہ نہیں کما لیتے آپ کو قرار نہیں آتا۔ لیکن کیا اس ہار سے حقیقی دنیا میں آپ کو ایک روپئے کا بھی نقصان ہوا؟؟ پھر یہ غصہ یہ جھنجھلاہٹ یہ بے چینی کیوں؟؟

یہ ورچول ورلڈ کا شکنجہ ہے جو آپ کو پوری طرح سے جکڑ لیتا ہے۔ آپ کا وقت آپ کے ارادے سب لوڈو کے قبضے میں چلے جاتے ہیں۔ آپ نے لوڈو انسٹال کیا تھا۔ اب لوڈ آپ کو ایفیکٹ کررہا ہے۔ اس سے پہلے کہ وائرس پوری طرح پھیل جائے اس سے نجات حاصل کرلیں۔

تو اگر آپ خود کو اشرف المخلوقات سمجھتے ہیں تو اپنی قوت ارادی کو استعمال کریں اور لوڈو کو ڈیلیٹ کرکے خود کو فورمیٹ کرلیں۔ ورنہ سسٹم کرپٹ ہوگیا تو آپ کہیں کے نہ رہیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں